دعای گنجو العرش

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات مے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جو ہر شے میں اپنی حکمت رکھتے ہے 

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات مے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جو میرے اندر دھڑکتی ہے اور اسی طرح سارے کائنات میں دھڑکا ہے اور یہ ذات کبھی کبھی جبّار نظر اتی ہے

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات وہ اپنے مقلوق پر اتنا مہربان ہے کے اپنے مقلوق کو نجات دے کر خوش ہوتے ہے

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جو عفو درگزر بھی کرتی ہے اور پیام ے نجات بھی دیتی ہے

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات اسکے ہر حکم میں چاہے شر ہو یا خیر کا نیمت چھپی ہوتی ہے جسکا اندازہ نفس نہیں سمجھ سکتی ہے اسکو سمجھنے کے لئے روح چاہیے

 

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات وہ ایسے نفاست والے ہے جو زررے زررے کی خبر رکھتے ہیں

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جو بےنیاز ہے جو اپنی عبادت آپ کرتے ہیں

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جو اتنی بڑھی خدرت والی کبھی اپنے فیصلے کے قلاف نہیں جاتے بلکے انصاف کرتے ہے

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جو میرے نفس کی تمام غلطیوں کو معاف بھی کرتے ہیں اور مجھے بھی معاف کرتی ہیں کیوں کی اسکو دوستی کا حق نبھانا ہے 

(١٠

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات وہ ایسا انصاف کرنے والا ہے اور اسکو ہے ضرورت کا خیال بھی رکھتا ہے

(١١

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات وہ ایسا راخیب ہے جو ہمارے نفس کی حفاظت کیا کرتا ہیں

(١٢

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جو میرے اندر دھڑک رہی ہے شروع بھی اسی کی ہر اور ختم بھی اسی کی ہے

(١٣

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جب انسان ماں کے پیٹ میں اتا ہے ٹوہ حرکت کرتا ہیں جب اسکو اپنے اصلی مقام کی طرف لوٹنا ہے اسکو مجسسم کی طرف لوٹنا ہے اسکے مجسسمے نے نفس کے ساتھ ے ساتھ الله کے ذات بھی اسی مقام پر منتقل ہو جاتے ہیں

(١٤

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات مقلوق کے بیچ حرکت کے ذرے قیام اور زندہ ہے 

(١٥

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات اپنے حکم سے ہر شے کے تقلیق کرتے ہے اسکے بعد اسکے اندر اپنا مقام واضھ کرتے ہیں 

(١٦

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ازیں ہے وہ ذات جو آسمانوں کے کنارے تک سفر کر سکتی ہیں

پاک ہے وہ ذات جو سارے کائنات کو الله نے اپنے حیثیت کی موافق تقلیق کے

(١٧

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ایک ہے وہ سارے کائنات کو اپنے گرفت مے لئے ہوا ہے

(١٨

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جب دھڑکتا ہے تو اپنے نور کے روشنی سے کائنات کے ہر دھڑکن میں انصاف کرتا ہے

(١٩

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات اپنے شہادت ہر شے آپ دے رہیں ہیں

(٢٠

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جب نفس کلمے تیابّ پڑھتا ہیں جو الله نے اپنے نفاست سے ہر عمل کو اپنے زممے لے لیتے ہیں

(٢١

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات سب سے پہلا اپنے نور کی ذرے اپنے نبی کی روح کو تقلیق کیا اسی روح کے ذرے کائنات کے ہر شے کو قیامت تک زندہ رکھا

(٢٢

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات سب سے پہلے اپنے نور کے ذرے اپنے نبی کے روح کو تقلیق کیا رو اسی روح کے ذرے کائنات کا آخری شے کو بھی دھڑکن دے رہی ہے

(٢٣

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات باتیں میں وجود ہے اور ظاہر میں دھڑکن ہیں

(٢٤

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ہر شے میں اپنے دھڑکن کو بلندی تک پہنچا رہا ہیں صفت کتنی بھی اونچی ہو جائے کبریائی تو ذات کی ہی ہوگی

(٢٥

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات سارے مقلوق کی ہر ضرورت کو تصدیق کرنے والا ہے

(٢٦

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ہر شے میں دھڑکتی ہے اور پیام ے نجات دیتے ہیں

(٢٧

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ہر انسان کے خون میں اپنے تقت ے عظیم کو قیام کرتے ہیں جسکے مجھمے آنے سے میری روح عرش کا طواف کر سکتی ہیں (یعنی خون میں موجود عرش کا 

(٢٨

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جسکے مجھ میں آنے سے میری روح عرش کا طواف کر سکتی ہیں

(٢٩

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات کوئی بھی کامیابی اسکے وجود کے بگیر ناممکن ہیں جسکے ذرے ہم سنتے بھی ہے اور دیکھتے بھی ہیں 

(٣٠

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جب بھی کسی پر قہار برساتا ہے تو اکیلا برساتا ہیں 

(٣١

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جب کسی انسان میں جاگتی ہے اپنے علم وہ حکمت کا اظہار کرتے ہیں کے سارے کاینات دنگ ہو جاتی ہیں

(٣٢

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات میری نفس جب ساکت ہو جاتی ہیں میری روح زندہ ہو جاتی ہیں میرا علم رب کا علم ہو جاتا ہیں میری حکمت رب کی حکمت ہو جاتی ہیں

(٣٣

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات میری نفس روح کی حرکت میں اگر داقل دیتی ہیں میرے اس عیب کو ذات چھپاتی بھی ہیں اور میرے خطا کو معاف بھی کرتی ہیں

(٣٤

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات میری نفس ساکت ہونے کے بعد میرے اندر دھڑکتی ہیں یہ بہترین بدلہ ہیں نفس کے لئے

(٣٥

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات سارے کائنات میں اپنے دھڑکن سے اپنے کبرییےکا اظہر کرتے ہیں

(٣٦

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات میرے نفس ساکت ہونے کے بعد اپنے ذات کی خبر دیتے ہیں اور اپنے وصی علم کا اظہر کرتی ہیں

(٣٧

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جسکے آنے میں ہر شے کی عظمت بڑھ جاتی ہیں اور تا قیامت تک عظمت برقرار رہتی ہیں

(٣٨

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جو لوگ نفس کی نفی کرتے ہیں ان میں پاک ذات دھڑکتی ہیں انکے ہر عمل میں ذات اپنی عظمت ہمیشہ کے لئے باقی رکھتے ہیں

(٣٩

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات بےنیاز اور بےروز سارے مقلوق کے اہتے کے ہوئے ہے

(٤٠

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جو زمین وا آسمان کو اپنے وجود سے حرکت دے رہے ہیں

(٤١

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات اپنے وجود سے سارے مقلوق کو پیدا کر رہی ہیں

(٤٢

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات دن وا رات کو گردش دے رہے ہیں

(٤٣

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات اپنے وجود سے سارے مقلوق کو رزق پہنچا سکتا ہیں

(٤٤

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات کائنات کے فاتح میں اس علم اور اسکا وجود موجود ہیں

(٤٥

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جو ہر شے میں دھڈک کر اپنے دوستی کو باٹ رہے ہیں

(٤٦

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جسکے آنے سے میری مغفرت تو ہوتے ہیں کیوں کے میں نفس کے عتبار سے ساکت ہوں ہر حرکت کے عتبار سے ذات خود ذات کی شکر ادا کرتی ہیں

(٤٧

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات اسکا علم اسکے عظمت سب پر حاوی ہیں

(٤٨

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ہر ملائکہ میں اور ہر حکومت میں اسی کی دھڑکن ہیں

(٤٩

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جو ہر شے میں دھڑکتی ہیں اور ہر شے اسی کے لئے عزت والی اور عظمت والی ہیں

(٥٠

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جب کوئی کلمہ پڑھتا ہے اور اسکی پہچان ہوتی ہیں تو اسکی خدرت روح سے ڈرنے لگتا ہیں

(٥١

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جسکے بڑے جھاڑ وا پہاڑ بھی اسکی حرکت کے ذرے اسکے بد-ے بیان کرتے ہیں

(٥٢

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جسکے دھڑکنے سے ہر انسان کے عیب چھپ جاتے ہیں اور وہ ایسے عظیم شان والا ہیں

(٥٣

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ہر ذررے کا علم جانے والا ہے جو غیب میں ہیں

(٥٤

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات اپنے خوبیو کی قدر اپ کرتے ہیں

(٥٥

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جسکے حکم سے سارے کائنات کا سفر جاری ہیں جو قدیم حکمت ہیں

(٥٦

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات سارے مقلوق کے عیبو کو چھپاتا ہی

(٥٧

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جو سنتا بھی ہیں اور ہر علم کو اپنے وجود سے پورا کرتا ہیں

(٥٨

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ہر زررے میں اپنے وجود کو تکسیم کرتا ہیں

(٥٩

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جسکا علم تا قیامت سلامت رہیگا کیوں کی اسکا وجود ہے اس میں

(٦٠

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ہر ملکیات کو ہر زررے کو ہر وجود کو نصرت دیتا ہیں

(٦١

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات وجود کو ہر زررے میں بانٹنے والا

(٦٢

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جو کلمہ پڑھتا ہیں اسکے وجود کو پا لیتا ہیں اپنے نفس کے کریب (ذات) کو دیکھتا ہیں

(٦٣

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ہر دھڑکن اسکے وجود کے وجہ سے ایک دوسرے سے دوستی رکھتے ہیں

(٦٤

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ہر وقت ہر نفس کی عیبو کو چھپاتا ہیں

(٦٥

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ہر شے کی قلب میں نور پیدا کرتا ہیں

(٦٦

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات کلمہ پڑھنے کے بعد ہر نفس کو اجس ہونا پڑھتا ہیں

(٦٧

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات نفس کو ہدایت دیتا ہیں شکر بجا لانے کا

(٦٨

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ہر مقلوق سے بےپرواہ اور قدیم ہیں

(٦٩

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات بندے کے ہر عمل میں اپنی بزرگی کو ظاہر کرتا ہیں

(٧٠

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات بندے کے ہر روحانی عمل میں مقلوق کا اظہار کرتا ہیں

(٧١

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ہر عمل میں سچائی کے ساتھ وادے کو پورا کرتا ہیں

(٧٢

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ہر عمل میں سچ کو ظاہر کرتا ہیں

(٧٣

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جو عمل روح کے ذرے ہونگا زور آوار اور مضبوط ہونگا

(٧٤

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جو مضبوط اور ہرا ہر روحانی طاقت کو عزیز رکھنے والا

(٧٥

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ہر چھپی ہی بات کو جب چاہے ظاہر کر سکتا ہیں

(٧٦

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات روحانی شکل میں زندہ رہیگا اور اسکو موت نہیں ایگی

(٧٧

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ساری مقلوق کے عیبو کو چھپاتا ہیں

(٧٨

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات نفس کی ہر غلطی کو بخش کر معاف بھی کرتا ہیں

(٧٩

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات سارے مقلوق کی ضرورتوں کو بلا شرط کے پوری کرتا ہیں

(٨٠

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات اپنے مقلوق پر مہربان تو ہے نظر نہیں اتا

(٨١

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ہر نفس پر رحم اور اسکی مغفرت چاہتا ہیں

(٨٢

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ہر نفس اتنا قریب ہیں جو اسکو ہر چیز اتا کرتا ہیں

(٨٣

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات روح کے ذرے کائنات کے ہر چیز پر اپنی خدرت ظاہر کرتا ہیں

(٨٤

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات اپنے مقلوق کو بخش تو دیتا ہیں پر احسان نہیں جتاتا

(٨٥

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات میرے مجسسمے پی اسکی حکومت اور بادشاہی چھائی ہی ہیں

(٨٦

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ہر بندے کے صورت کو خوبصورتی سے سوارتا ہیں

(٨٧

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات اپنے عزیز کے ساتھ سازا دینے کے لئے پیچھے نہیں ہٹتا

(٨٨

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات اور سزا دینے کے بعد کوئی غرور نہیں کرتا

(٨٩

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ اپنے روحانی حرکت میں کسی نفس کی حرکت کو برداشت نہیں کرتا

(٩٠

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہیووہ ذات کلمہ پڑھنے کے بعد ہر بندے کے اندر نہایت ہی صاف ہو جاتی ہیں روح

(٩١

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جو فرشتوں کے اندر بھی روح بنکر دھڑکتی ہیں

(٩٢

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ہر گناہ گار کو بکشا ہے اور نعمتوں سے سرفراز کرتا ہیں

(٩٣

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات انسان کے مجسسمے کو اپنی ملکیات ہوتے ہوئے دنیا کی رونق بنانے کے لئے چھوڑ دیا

(٩٤

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات اپنے بندے پر رحم تو کرتا ہیں پر احسان نہیں جتاتا

(٩٥

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جو آدم صفی الله کے اندر روح بنکر دھڑکتی ہیں

(٩٦

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات نوح نجی الله کے اندر روح بنکر دھڑکتی ہیں

(٩٧

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات ابراہیم خلیل الله کے اندر دھڑک کر سارے مقلوق کو کوستی کا پیام دیتی ہیں

(٩٨

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جو اسمیل ذبیح الله کے اندر دھڑک کر سری انسانیت کو آ قربانی کا درز دیتے ہیں

(٩٩

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

پاک ہے وہ ذات جو موسیٰ کلیم الله کے اندر جو ذات -ے-مجازی کے ذرے ذات-ے-حق سے ماہو گفتگو ہیں

(١٠٠

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

داود خلیفتہ الله ہوکر الله کے خلیفہ ہونے کا اعلان کرتے ہیں

(١٠١

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

جو عیسی روح الله کے اندر روح بنکر دھڑکتی ہیں اور سارے عالم میں انسانوں میں بھی دھڑکتی ہیں

(١٠٢

نہیں رہیگی کوئی صفت باقی سواے ذات کے میرے اندر روح بنکر

جو محمّد ﷺ کے اندر دھڑکتی ہیں اور قرآن کے تقاضے کے پورا کرتی ہیں

اور الله کی رحمت اسکی مقلوق میں سے بہترین خلق پر ہو جو اسی عرش کا نور اور تمام امبیاں اور رسولوں سے افضل ہیں. جو ہمارے حبیب اور ہمارے سردار اور ہمارے سہارا – ے شفی ہے اور ہمارے آقا محمّد ﷺ ہے اور آپکے تمام آل اور تمام اس-حبی پر بھی رحمت ہو. اے رحم کرنے والے ، سب سے زیادہ رحم کرنے والے اپنی رحمت سے ہماری دعا قبول فرما

 

 

 

 

 

Translate »